عمران خان کی نا اہلی

ہم بھی کیا لوگ ہیں جہاں ہمارا میڈیا ہمیں دھکیل دیتا ہے ہم اس طرف چل پڑتے ہیں کیا ہم لوگوں کی کوئی عقل نہیں ہےہم نباتات ہیں ہمیں کوئی کچھ بھی کہے گا اس کی بات سے اتفاق کر لیں گے بغیر تحقیق کے اگر ہمارا میڈیا کہتا ہے کہ عمران خان غلط ہے تو سب لوگ عمران خان کی برائیاں اور عمران خان سے معافیاں مانگتے نہیں تھکتےاور لیکن اگر عمران خان کا کوئی غلط بول ہو یا غلط کام ہو تو ایک میڈیا اس کو بھی پروٹکٹ کرتا ہے اور عوام میڈیا کے ساتھ عمرا ن خان کو درست قرار دے دیتی ہے  اور عمران خان کی پالیسیاں اور مودیز کا تجزیہ اور تحقیق بتانا شروع اور ایس آٖف ڈوئنگ بزنس کی تعریفیں کرتی نہیں تھکتی ایسیے میں مجھے نبی کریم ﷺ کی حدیث مبارکہ یاد آ گی جاب آپ کو پتہ نہ چلے کہ کون ظالم  ہے اور مظلوم کون ہے تو آپ دونوں لوگوں سے کنارہ کشی اختیار کر لیں کہیں آپ مظلوم کے خلاف ظالم کا ساتھ نہ دے رہے ہوں۔  کہتے ہیں کہ عمرا ن خان صاحب آپ نے تو بیڑا غرق ہی کر دیا ہے مہنگائی مہنگائی ہر طرف سے امڈ رہی ہے آ پ کچھ کرتے دکھائی نہیں دے رہے ہیں ایک طرف اگر عمران خان صاحب نے نیب قانون میں ترمیم کر دی ہے اس سے پاکستان مسلم لیگ (ن) اور پاکستان پیپلز پارٹی ناخوش ہے اور بلکہ اسے این آر او پلس قرار دے رہے ہیں اگر یہ قانون پاس ہوا ہے تو کس کو بچایا جا رہا ہے کیا نون لیگ کے رہنمائوں کو فائدہ پہنچایا جا رہا ہے پیپلز پارٹی کے رہنمائوں کو بچایا جارہا ہے پاکستان تحریک انصاف کے کرپٹ لوگوں کو بچایا جا رہا ہے کیا اس قانون کے فائدہ عوام کو ہونے جا رہا ہے یعنی کرپٹ لوگوں کے سر پر سے لٹکتی تلوار کو ہٹایا جا رہا ہے اگر ایسا ہے تو اپوزیشن اس پر کیوں شور کر رہی ہے اگر اپوزیشن کےمزید اور لوگ پکڑے جائیں تب اپوزیشن کو سکون ملے گا لیکن دوسری طرف کرپشن کو روکنے والا نظام کے بیڑا غرق ہونے جا رہا ہے کیوں کہ نیب کے قانون میں امینڈمینٹ ملک کی لا قانونیت کو بڑھائے گا۔ کرپٹ لوگوں کا احتساب پھر نہیں ہو گا ملک میں انارکی پھیلے گی لیکن یہ بات سمجھ میں آتی ہے کہ نیب پیپلز پارٹی کے سربراہ آصف زرداری کو کیوں پکڑتی ہے کیوں کہ آصف زرداری ایک کرپٹ مافیہ کا سرغنہ ہے شرجیل میمن ڈاکٹر عاصم اس کے پارٹنر ہیں وہیں ذوالفقار مرزا ہیں جو آصف زرداری کے بچپن کے دوست ہیں ان کو نیب ہاتھ نہیں لگاتی ہے کیوں کہ وہ صاف اور سچے کھڑے بندے ہیں نیب رضا ربانی پر ہاتھ نہیں ڈالتی اعتزاز احسن پر ہاتھ نہیں ڈالتی ہے سابقہ رکن آف پیپلز پارٹی شاہ محمود قریشی پر بھی ہاتھ نہیں ڈالتی ہے اگر نون لیگ کو دیکھا جائے تو نیب شاہد خاقان عباسی پر ہاتھ ڈالتے ہوئے دکھائی دیتی ہے رانا ثنا اللہ کو اریسٹ کرتی ہے نواز شہباز حمزہ یوسف مریم احسن اقبال کو جیل میں ڈالتے ہوئے نظر آتی ہے لیکن چوہدری نثار علی خان پر ہاتھ نہیں ڈالتی ہے حالانکہ چوہدری نثار کسی حکومت کے حصہ بھی نہیں ہیں اس سے پتہ چلتا ہے نیب قانون غلط نہیں تھا بلکہ جو کرپٹ ہے اس کونیب اریسٹ کرتی ہے اگر نیب غلط ہوتا تو رضا ربانی کو پکڑتا اگر نیب غلط ہوتا تو شاہ محمود قریشی کو پکڑتا اگر نیب غلط ہوتا تو چوہدری نثار علی خان کو پکڑتا اگر نیب غلط ہوتا تو جاوید ہاشمی کو پکڑتا نیب کرپٹ لوگوں کو کیوں پکڑتا ہے اور میڈیا کے اینکرز حامد میر مبشر لقمان شاہزیب خانزادہ طلعت حسین جاوید چوہدری عاصمہ شیرازی اور بہت سے اینکرز عوام کو یہ تا ثر دینے کی کوشیش کرتے دکھائی دیتے ہیں کہ نواز شریف صحیح وزیر اعظم تھا عمران خان غلط اور سیلیکٹڈ وزیراعظم ہیں اگر وہ کوئی اچھا کام کریں تو یہ کام کی داغ بیل تو نواز شریف نے رکھی تھی اس لیے اس کا کریڈٹ نواز شریف کو جاتا ہے عمران خان کو نہیں جاتا ہے ٹھیک ہے بھائی آپ سارا کریڈٹ نواز شریف کو دو لیکن عوام کو معاف نہیں کرتے ہیں عوام کو گمراہ کرتے ہیں اور کہتے ہیں جو ہم کہتے ہیں وہ سچ ہے باقی سب جھوٹ ہے اور بلکہ ایسے پکے کیلکولیٹڈ سوال تیار کیے ہوں گے جن پر کیلکولیشن کرنے پر عوام کا ٹائم لگے گا عوام بغیر تحقیق کیے اسے اصل سمجھنے پر اکتفا کرے گی لیکن پھر بھی اگر یہ اینکر غلط ثابت ہو جائیں تو یہ سوال میں اپنے مطابق بدلائو لے آئیں گے جیسے ایک بی آر ٹی منصبوبے پر ان کا مقصد پورا نہیں ہوا اور شکست ہوئی تو وہ مالم جبہ منصبوبے کو سوال میں ایڈ کر لیں گے لحا ظہ اس سے پتہ چلتا ہے کہ یہ لوگ نواز شریف کے پیسوں پر پلتے تھے اور پلتے ہیں یہ عوام کو مس گائیڈ کرتے ہیں ان سے کو ئی پوچھے جو پیسے تم نواز شریف سے لیتے ہو نواز شریف کی چمچہ گری کے لیے تم عوام کو گمراہ کرتے ہو تم اس پیسے کے بارے میں اپنے پروگرامز میں بتائویا اس میں سے عوام کا حصہ بھی گمراہ ہونے والے لوگوں کو بھیجو تمہارے گھر کے چولہے تو چمچہ گیری سے چل جائیں گے عوام کے تمہاری گمراہ کن باتوں سے نہیں چلیں گے بلکہ تم منافق ہو تم سچ کو جھوٹ اور جھوٹ کو سچ کہتے ہو اور منافق کی سب سے بڑی نشانی یہی ہے وہ جب بھی بولتا ہے تو جھوٹ بولتا ہے لیکن عمران خان صاحب نے کون سا تیر مار لیا ہے آپ لوگوں کو روزگار نہیں دے رہے بلکہ شلٹر پرووائیڈ کر رہے ہیں لوگوں کو روز گار ان کے گھر کی دہلیز پر دے دیتے یہ شلٹر والے لوگ اپنوں میں بیٹھ کر رزق کھا رہے ہوتے اور آپ ٹیکس کا رونا روتے ہیں ہر پروڈکٹ پر ٹیکس تو لگا ہوا ہے کیا آپ لیز چپس ڈبہ کے دودھ ٹوتھ پیسٹ پر سیلز ٹیکس نہیں لیتے ہیں اور لاکھوں میڈیسنز پر سیلز ٹیکس نہیں لیتے عوام کی جیب میں سے نہیں لیتے کیا آپ پیٹرول پر ٹیکس نہیں لیتے کیا آپ ایل پی جی مہنگی کر کے اپنا ٹیکس اور خزانہ نہیں بھرتے پھر آپ عوام کو اپنی جھوٹی باتوں سے یقین دلانے کی کوشیش کرتے ہیں افسوس ہے آپ پرسارا کچھ عوام سے لے کر بھی عوام کو تانے مارتے ہیں عوم ٹیکس نہیں دیتی عوام کو پتہ بھی نہیں اور ان کی جیبوں سے پیسے نکلوا کر کہتے ہیں کہ عوام چور ہے۔ نہیں تھکتےاور لیکن کہتے ہیں کہ عمرا ن خان صاحب آپ نے تو بیڑا غرق ہی کر دیا ہے مہنگائی مہنگائی ہر طرف سے امڈ رہی ہے آ کچھ کرتے دکھائی نہیں دے رہے ہیں ایک طرف اگر عمران خان صاحب نے نیب قانون میں ترمیم کر دی ہے اس سے پاکستان مسلم لیگ (ن) اور پاکستان پیپلز پارٹی ناخوش ہے اور بلکہ اسے این آر او پلس قرار دے رہے ہیں اگر یہ قانون پاس ہوا ہے تو کس کو بچایا جا رہے ہے کیا نون لیگ کے رہنمائوں کو فائدہ پہنچایا جا رہے ہے پیپلز پارٹی کے رہنمائوں کو بچایا ہم بھی کیا لوگ ہیں جہاں ہمارا میڈیا ہمیں دھکیل دیتا ہے ہم اس طرف چل پڑتے ہیں اگر ہمارا میڈیا کہتا ہے کہ عمران خان غلط ہے تو سب لوگ عمران خان کی برائیاں اور عمران خان سے معافیاں مانگتے نہیں تھکتےاور لیکن کہتے ہیں کہ عمرا ن خان صاحب آپ نے تو بیڑا غرق ہی کر دیا ہے مہنگائی مہنگائی ہر طرف سے امڈ رہی ہے آ کچھ کرتے دکھائی نہیں دے رہے ہیں ایک طرف اگر عمران خان صاحب نے نیب قانون میں ترمیم کر دی ہے اس سے پاکستان مسلم لیگ (ن) اور پاکستان پیپلز پارٹی ناخوش ہے اور بلکہ اسے این آر او پلس قرار دے رہے ہیں اگر یہ قانون پاس ہوا ہے تو کس کو بچایا جا رہے ہے کیا نون لیگ کے رہنمائوں کو فائدہ پہنچایا جا رہے ہے پیپلز پارٹی کے رہنمائوں کو بچایا جارہا ہے پاکستان تحریک انصاف کے کرپٹ لوگوں کو بچایا جا رہا ہے کیا اس قانون کے فائدہ عوام کو ہونے جا رہا ہے یعنی کرپٹ لوگوں کے سر پر سے لٹکتی تلوار کو ہٹایا جا رہا ہے اگر ایسا ہے تو اپوزیشن اس پر کیوں شور کر رہی ہے اگر اپوزیشن کےمزید اور لوگ پکڑے جائیں تب اپوزیشن کو سکون ملے گا لیکن دوسری طرف کرپشن کو روکنے والا نظام کے بیڑا غرق ہونے جا رہا ہے کیوں کہ نیب کے قانون میں امینڈمینٹ ملک کی لا قانونیت کو بڑھائے گا۔ کرپٹ لوگوں کا احتساب پھر نہیں ہو گا ملک میں انارکی پھیلے گی لیکن یہ بات سمجھ میں آتی ہے کہ نیب پیپلز پارٹی کے سربراہ آصف زرداری کو کیوں پکڑتی ہے کیوں کہ آصف زرداری ایک کرپٹ مافیہ کا سرغنہ ہے شرجیل میمن ڈاکٹر عاصم اس کے پارٹنر ہیں وہیں ذوالفقار مرزا ہیں جو آصف زرداری کے بچپن کے دوست ہیں ان کو نیب ہاتھ نہیں لگاتی ہے کیوں کہ وہ صاف اور سچے کھڑے بندے ہیں نیب رضا ربانی پر ہاتھ نہیں ڈالتی اعتزاز احسن پر ہاتھ نہیں ڈالتی ہے سابقہ رکن آف پیپلز پارٹی شاہ محمود قریشی پر بھی ہاتھ نہیں ڈالتی ہے اگر نون لیگ کو دیکھا جائے تو نیب شاہد خاقان عباسی پر ہاتھ ڈالتے ہوئے دکھائی دیتی ہے رانا ثنا اللہ کو اریسٹ کرتی ہے نواز شہباز حمزہ یوسف مریم احسن اقبال کو جیل میں ڈالتے ہوئے نظر آتی ہے لیکن چوہدری نثار علی خان پر ہاتھ نہیں ڈالتی ہے حالانکہ چوہدری نثار کسی حکومت کے حصہ بھی نہیں ہیں اس سے پتہ چلتا ہے نیب قانون غلط نہیں تھا بلکہ جو کرپٹ ہے اس کونیب اریسٹ کرتی ہے اگر نیب غلط ہوتا تو رضا ربانی کو پکڑتا اگر نیب غلط ہوتا تو شاہ محمود قریشی کو پکڑتا اگر نیب غلط ہوتا تو چوہدری نثار علی خان کو پکڑتا اگر نیب غلط ہوتا تو جاوید ہاشمی کو پکڑتا نیب کرپٹ لوگوں کو کیوں پکڑتا ہے اور میڈیا کے اینکرز حامد میر مبشر لقمان شاہزیب خانزادہ طلعت حسین جاوید چوہدری عاصمہ شیرازی اور بہت سے اینکرز عوام کو یہ تا ثر دینے کی کوشیش کرتے دکھائی دیتے ہیں کہ نواز شریف صحیح وزیر اعظم تھا عمران خان غلط اور سیلیکٹڈ وزیراعظم ہیں اگر وہ کوئی اچھا کام کریں تو یہ کام کی داغ بیل تو نواز شریف نے رکھی تھی اس لیے اس کا کریڈٹ نواز شریف کو جاتا ہے عمران خان کو نہیں جاتا ہے ٹھیک ہے بھائی آپ سارا کریڈٹ نواز شریف کو دو لیکن عوام کو معاف نہیں کرتے ہیں عوام کو گمراہ کرتے ہیں اور کہتے ہیں جو ہم کہتے ہیں وہ سچ ہے باقی سب جھوٹ ہے اور بلکہ ایسے پکے کیلکولیٹڈ سوال تیار کیے ہوں گے جن پر کیلکولیشن کرنے پر عوام کا ٹائم لگے گا عوام بغیر تحقیق کیے اسے اصل سمجھنے پر اکتفا کرے گی لیکن پھر بھی اگر یہ اینکر غلط ثابت ہو جائیں تو یہ سوال میں اپنے مطابق بدلائو لے آئیں گے جیسے ایک بی آر ٹی منصبوبے پر ان کا مقصد پورا نہیں ہوا اور شکست ہوئی تو وہ مالم جبہ منصبوبے کو سوال میں ایڈ کر لیں گے لحا ظہ اس سے پتہ چلتا ہے کہ یہ لوگ نواز شریف کے پیسوں پر پلتے تھے اور پلتے ہیں یہ عوام کو مس گائیڈ کرتے ہیں ان سے کو ئی پوچھے جو پیسے تم نواز شریف سے لیتے ہو نواز شریف کی چمچہ گری کے لیے تم عوام کو گمراہ کرتے ہو تم اس پیسے کے بارے میں اپنے پروگرامز میں بتائویا اس میں سے عوام کا حصہ بھی گمراہ ہونے والے لوگوں کو بھیجو تمہارے گھر کے چولہے تو چمچہ گیری سے چل جائیں گے عوام کے تمہاری گمراہ کن باتوں سے نہیں چلیں گے بلکہ تم منافق ہو تم سچ کو جھوٹ اور جھوٹ کو سچ کہتے ہو اور منافق کی سب سے بڑی نشانی یہی ہے وہ جب بھی بولتا ہے تو جھوٹ بولتا ہے لیکن عمران خان صاحب نے کون سا تیر مار لیا ہے آپ لوگوں کو روزگار نہیں دے رہے بلکہ شلٹر پرووائیڈ کر رہے ہیں لوگوں کو روز گار ان کے گھر کی دہلیز پر دے دیتے یہ شلٹر والے لوگ اپنوں میں بیٹھ کر رزق کھا رہے ہوتے اور آپ ٹیکس کا رونا روتے ہیں ہر پروڈکٹ پر ٹیکس تو لگا ہوا ہے کیا آپ لیز چپس ڈبہ کے دودھ ٹوتھ پیسٹ پر سیلز ٹیکس نہیں لیتے ہیں اور لاکھوں میڈیسنز پر سیلز ٹیکس نہیں لیتے عوام کی جیب میں سے نہیں لیتے کیا آپ پیٹرول پر ٹیکس نہیں لیتے کیا آپ ایل پی جی مہنگی کر کے اپنا ٹیکس اور خزانہ نہیں بھرتے پھر آپ عوام کو اپنی جھوٹی باتوں سے یقین دلانے کی کوشیش کرتے ہیں افسوس ہے آپ پرسارا کچھ عوام سے لے کر بھی عوام کو تانے مارتے ہیں عوم ٹیکس نہیں دیتی عوام کو پتہ بھی نہیں اور ان کی جیبوں سے پیسے نکلوا کر کہتے ہیں کہ عوام چور ہے۔ جارہا ہے پاکستان تحریک انصاف کے کرپٹ لوگوں کو بچایا جا رہا ہے کیا اس قانون کے فائدہ عوام کو ہونے جا رہا ہے یعنی کرپٹ لوگوں کے سر پر سے لٹکتی تلوار کو ہٹایا جا رہا ہے اگر ایسا ہے تو اپوزیشن اس پر کیوں شور کر رہی ہے اگر اپوزیشن کےمزید اور لوگ پکڑے جائیں تب اپوزیشن کو سکون ملے گا لیکن دوسری طرف کرپشن کو روکنے والا نظام کے بیڑا غرق ہونے جا رہا ہے کیوں کہ نیب کے قانون میں امینڈمینٹ ملک کی لا قانونیت کو بڑھائے گا۔ کرپٹ لوگوں کا احتساب پھر نہیں ہو گا ملک میں انارکی پھیلے گی لیکن یہ بات سمجھ میں آتی ہے کہ نیب پیپلز پارٹی کے سربراہ آصف زرداری کو کیوں پکڑتی ہے کیوں کہ آصف زرداری ایک کرپٹ مافیہ کا سرغنہ ہے شرجیل میمن ڈاکٹر عاصم اس کے پارٹنر ہیں وہیں ذوالفقار مرزا ہیں جو آصف زرداری کے بچپن کے دوست ہیں ان کو نیب ہاتھ نہیں لگاتی ہے کیوں کہ وہ صاف اور سچے کھڑے بندے ہیں نیب رضا ربانی پر ہاتھ نہیں ڈالتی اعتزاز احسن پر ہاتھ نہیں ڈالتی ہے سابقہ رکن آف پیپلز پارٹی شاہ محمود قریشی پر بھی ہاتھ نہیں ڈالتی ہے اگر نون لیگ کو دیکھا جائے تو نیب شاہد خاقان عباسی پر ہاتھ ڈالتے ہوئے دکھائی دیتی ہے رانا ثنا اللہ کو اریسٹ کرتی ہے نواز شہباز حمزہ یوسف مریم احسن اقبال کو جیل میں ڈالتے ہوئے نظر آتی ہے لیکن چوہدری نثار علی خان پر ہاتھ نہیں ڈالتی ہے حالانکہ چوہدری نثار کسی حکومت کے حصہ بھی نہیں ہیں اس سے پتہ چلتا ہے نیب قانون غلط نہیں تھا بلکہ جو کرپٹ ہے اس کونیب اریسٹ کرتی ہے اگر نیب غلط ہوتا تو رضا ربانی کو پکڑتا اگر نیب غلط ہوتا تو شاہ محمود قریشی کو پکڑتا اگر نیب غلط ہوتا تو چوہدری نثار علی خان کو پکڑتا اگر نیب غلط ہوتا تو جاوید ہاشمی کو پکڑتا نیب کرپٹ لوگوں کو کیوں پکڑتا ہے اور میڈیا کے اینکرز حامد میر مبشر لقمان شاہزیب خانزادہ طلعت حسین جاوید چوہدری عاصمہ شیرازی اور بہت سے اینکرز عوام کو یہ تا ثر دینے کی کوشیش کرتے دکھائی دیتے ہیں کہ نواز شریف صحیح وزیر اعظم تھا عمران خان غلط اور سیلیکٹڈ وزیراعظم ہیں اگر وہ کوئی اچھا کام کریں تو یہ کام کی داغ بیل تو نواز شریف نے رکھی تھی اس لیے اس کا کریڈٹ نواز شریف کو جاتا ہے عمران خان کو نہیں جاتا ہے ٹھیک ہے بھائی آپ سارا کریڈٹ نواز شریف کو دو لیکن عوام کو معاف نہیں کرتے ہیں عوام کو گمراہ کرتے ہیں اور کہتے ہیں جو ہم کہتے ہیں وہ سچ ہے باقی سب جھوٹ ہے اور بلکہ ایسے پکے کیلکولیٹڈ سوال تیار کیے ہوں گے جن پر کیلکولیشن کرنے پر عوام کا ٹائم لگے گا عوام بغیر تحقیق کیے اسے اصل سمجھنے پر اکتفا کرے گی لیکن پھر بھی اگر یہ اینکر غلط ثابت ہو جائیں تو یہ سوال میں اپنے مطابق بدلائو لے آئیں گے جیسے ایک بی آر ٹی منصبوبے پر ان کا مقصد پورا نہیں ہوا اور شکست ہوئی تو وہ مالم جبہ منصبوبے کو سوال میں ایڈ کر لیں گے لحا ظہ اس سے پتہ چلتا ہے کہ یہ لوگ نواز شریف کے پیسوں پر پلتے تھے اور پلتے ہیں یہ عوام کو مس گائیڈ کرتے ہیں ان سے کو ئی پوچھے جو پیسے تم نواز شریف سے لیتے ہو نواز شریف کی چمچہ گری کے لیے تم عوام کو گمراہ کرتے ہو تم اس پیسے کے بارے میں اپنے پروگرامز میں بتائویا اس میں سے عوام کا حصہ بھی گمراہ ہونے والے لوگوں کو بھیجو تمہارے گھر کے چولہے تو چمچہ گیری سے چل جائیں گے عوام کے تمہاری گمراہ کن باتوں سے نہیں چلیں گے بلکہ تم منافق ہو تم سچ کو جھوٹ اور جھوٹ کو سچ کہتے ہو اور منافق کی سب سے بڑی نشانی یہی ہے وہ جب بھی بولتا ہے تو جھوٹ بولتا ہے لیکن عمران خان صاحب نے کون سا تیر مار لیا ہے آپ لوگوں کو روزگار نہیں دے رہے بلکہ شلٹر پرووائیڈ کر رہے ہیں لوگوں کو روز گار ان کے گھر کی دہلیز پر دے دیتے یہ شلٹر والے لوگ اپنوں میں بیٹھ کر رزق کھا رہے ہوتے اور آپ ٹیکس کا رونا روتے ہیں ہر پروڈکٹ پر ٹیکس تو لگا ہوا ہے کیا آپ لیز چپس ڈبہ کے دودھ ٹوتھ پیسٹ پر سیلز ٹیکس نہیں لیتے ہیں اور لاکھوں میڈیسنز پر سیلز ٹیکس نہیں لیتے عوام کی جیب میں سے نہیں لیتے کیا آپ پیٹرول پر ٹیکس نہیں لیتے کیا آپ ایل پی جی مہنگی کر کے اپنا ٹیکس اور خزانہ نہیں بھرتے پھر آپ عوام کو اپنی جھوٹی باتوں سے یقین دلانے کی کوشیش کرتے ہیں افسوس ہے آپ پرسارا کچھ عوام سے لے کر بھی عوام کو تانے مارتے ہیں عوم ٹیکس نہیں دیتی عوام کو پتہ بھی نہیں اور ان کی جیبوں سے پیسے نکلوا کر کہتے ہیں کہ عوام چور ہے۔